Holi Festival Essay | Festival of Colors | In English and Urdu

Holi Festival Essay | Festival of Colors | In English and Urdu

Table of Contents [Show]

Holi Festival Essay or Festival of Colors Essay in English

Important for Urdu Readers: Go down to read this article in Urdu Language.

Holi Festival Essay | Festival of Colors | In English and Urdu
Holi is the most enjoyable festival of the Hindus. It is celebrated on the last day of the month of Phalgun. It is the festival of colors. It is the festival of meeting and embracing one-another forgetting all the enmities and bitterness.

➽ There is an origin behind this festival. There was a devil king Hiran-Kashyapu in Satyug (The Golden Age). He was known for known for his terrorism.

He wanted to kill his son Prahlad who was a great devotee of Lord Vishnu. Hirankashyapu was a great enemy of Lord Vishnu. He declared himself the Lord.

In the beginning he told Prahlad not to worship Lord Vishnu. When Prahlad did not leave worshiping Lord Vishnu, Hirankashyapu tried to kill Prahlad applying so many ways.

But all the efforts went in vain. His sister Holika was blessed with a sheet of cloth which was fire proof. Holika assured him that she would sit in fire with Prahlad in her lap.

She would be saved with the help of the sheet and Prahalad might burn to ashes. But it happened just reverse. Prahlad was saved and Holika burnt to ashes.
Holi Festival Essay | Festival of Colors | In English and Urdu
This is the reason why the festival, Holi, is celebrated. This festival shows the victory of truth and gouduns over the evil. In the might of the precious day of Holi a huge fire is made. It is the symbol of the burn of Holika, the evil force.

➽ On the day of the Holi the people play with colours and mud. They throw colors on one-another. At noon they take bath and wear new clothes.

The people visit to all the houses of the friends and relatives in group. They split abir (gulal) on the feet of the elders and they rub gulal on the face of the youngers.

In every house sweets are offered. All the people embrace one-another either friends or enemies.

A group of people visit from door to door singing the songs of Holi with drum and other musical instruments. People send greetings also to their friends and relatives wishing them good luck.

➽ On the whole, Holi is a grand festival as it provides merriment and joy to the people. It produces love and affection among them.

Holi Essay in Urdu Language

You Are Reading : Holi essay in Urdu paragraph, Holi festival essay in Urdu, Holi Mazmoon in Urdu, Holi short essay in Urdu.

Disclaimer: This article is an Urdu version of the English version. This conversion was made with the help of Google Translate. There may be some mistakes in this conversion. Our site EssayBooks4u.Com will not be accountable for this conversion.

ہولی ہندوؤں کا سب سے زیادہ لطف اندوز تہوار ہے۔ یہ پھلگن مہینے کے آخری دن منایا جاتا ہے۔ یہ رنگوں کا تہوار ہے۔ یہ تمام دشمنیوں اور تلخیوں کو فراموش کرکے ایک دوسرے کو ملنے اور گلے ملنے کا تہوار ہے۔

اس تہوار کے پیچھے ایک اصل ہے۔ ستیوگ (سنہری دور) میں ایک شیطان بادشاہ ہیران کشیپو تھا۔ وہ اپنی دہشت گردی کے لئے جانا جاتا تھا۔ وہ اپنے بیٹے پرہلاد کو قتل کرنا چاہتا تھا جو بھگوان وشنو کا بہت بڑا عقیدت مند تھا۔ ہرنکشیاپو بھگوان وشنو کا ایک بہت بڑا دشمن تھا۔ اس نے خود کو خداوند قرار دیا۔ شروع میں اس نے پرہلاد سے کہا تھا کہ وہ بھگوان وشنو کی پوجا نہ کریں۔ جب پرہلاد نے بھگوان وشنو کی پوجا چھوڑنا نہیں چھوڑا ، تو ہیرانکشیاپو نے بہت سارے طریقوں کا استعمال کرتے ہوئے پرہلاد کو مارنے کی کوشش کی۔ لیکن ساری کوششیں رائیگاں گئیں۔ اس کی بہن ہولیکا کو کپڑے کی چادر عطا ہوئی جو فائر پروف تھا۔ ہولیکا نے اسے یقین دلایا کہ وہ اپنی گود میں پرہلاد کے ساتھ آگ لگائے گی۔ وہ چادر کی مدد سے بچایا جاتا اور پرہلاڈ راکھ میں جل گ.۔ لیکن یہ بالکل الٹ ہوا۔ پرہلاد بچ گیا اور ہولیکا جل کر راکھ ہوگئی۔ اسی وجہ سے تہوار ، ہولی منایا جاتا ہے۔ اس تہوار میں حق کی فتح اور برائی پر قابو پانے کا مظاہرہ کیا گیا ہے۔ ہولی کے قیمتی دن کی طاقت میں ایک بہت بڑی آگ لگی ہوئی ہے۔ یہ ہولیکا ، بری طاقت کی جلانے کی علامت ہے۔

ہولی کے دن لوگ رنگوں اور کیچڑ سے کھیلتے ہیں۔ وہ ایک دوسرے پر رنگ پھینک دیتے ہیں۔ دوپہر کے وقت وہ نہاتے ہیں اور نئے کپڑے پہنتے ہیں۔ لوگ گروپ میں دوستوں اور رشتہ داروں کے سب گھروں میں جاتے ہیں۔ انہوں نے بزرگوں کے پیروں پر ابیر (گلال) کو تقسیم کیا اور وہ نوجوانوں کے چہرے پر گلال رگڑ رہے ہیں۔ ہر گھر میں مٹھائیاں پیش کی جاتی ہیں۔ تمام لوگ دوست یا دشمن ایک دوسرے کو گلے لگاتے ہیں۔ لوگوں کا ایک گروپ گھر گھر جا کر ڈھول اور دیگر موسیقی کے آلات سے ہولی کے گیت گاتا ہے۔ لوگ اپنے دوست احباب اور رشتہ داروں کو بھی ان کی خوش قسمتی کی مبارکباد دیتے ہیں۔

مجموعی طور پر ، ہولی ایک عظیم الشان تہوار ہے کیونکہ یہ لوگوں کو خوشی اور خوشی فراہم کرتا ہے۔ اس سے ان میں محبت اور پیار پیدا ہوتا ہے۔
You Were Reading : Holi Festival Essay | Festival of Colors | In English and Urdu